اربعین: اسماء و صفات الٰہیہ

حضور ﷺ کا ارشاد گرامی ہے: کوئی شخص اللہ سے زیادہ غیرت مند نہیں

قَوْلُ النَّبِيِّ صلی الله عليه وآله وسلم : لَا شَخْصَ اَغْيَرُ مِنَ اللهِ تَعَالٰی

حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا ارشاد گرامی ہے: ’کوئی شخص اللہ تعالیٰ سے زیادہ غیرت مند نہیں‘

  1. عَنْ عَبْدِ اللهِ رضي الله عنه، عَنِ النَّبِيِّ صلی الله عليه وآله وسلم قَالَ: مَا مِنْ اَحَدٍ اَغْيَرُ مِنَ اللهِ مِنْ اَجْلِ ذٰلِکَ حَرَّمَ الْفَوَاحِشَ، وَمَا اَحَدٌ اَحَبَّ إِلَيْهِ الْمَدْحُ مِنَ اللهِ.

مُتَّفَقٌ عَلَيْهِ.

اخرجه البخاري في الصحيح، کتاب النکاح، باب الغيرة، 5/ 2002، الرقم/ 4922، وايضًا في کتاب التوحيد، باب قول اللہ تعالٰی: ويحذرکم اللہ نفسه، 6/ 2693، الرقم/ 6968، ومسلم في الصحيح، کتاب التوبة، باب غيرة اللہ تعالٰی وتحريم الفواحش، 4/ 2113، الرقم/ 2760، واحمد بن حنبل في المسند، 1/ 425، الرقم/ 4044.

حضرت عبد اللہ (بن مسعود) رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ حضورنبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا: اللہ تعالیٰ سے زیادہ غیرت والا کوئی بھی نہیں ہے، اسی لیے اُس نے بے حیائی کے کاموں کو حرام قرار دیا ہے۔ ایسا کوئی نہیں جسے (اپنی) مدح و ثنا اللہ تعالیٰ سے زیادہ محبوب ہو۔

یہ حدیث متفق علیہ ہے۔

وَفِي رِوَايَةِ اَبِي هُرَيْرَةَ رضي الله عنه عَنِ النَّبِيِّ صلی الله عليه وآله وسلم اَنَّهُ قَالَ: إِنَّ اللهَ يَغَارُ وَغَيْرَهُ اللهِ اَنْ يَاتِيَ الْمُوْمِنُ مَا حَرَّمَ اللهُ.

مُتَّفَقٌ عَلَيْهِ.

اخرجه البخاري في الصحيح، کتاب النکاح، باب الغيرة، 5/ 2002، الرقم/ 4924، ومسلم في الصحيح، کتاب التوبة، باب غيرة اللہ وتحريم الفواحش، 4/ 2114، الرقم/ 2761، والترمذي في السنن، کتاب الرضاع، باب ما جاء في الغيرة، 3/ 471، الرقم/ 1168، وابن حبان في الصحيح، 1/ 528، الرقم/ 293، وابو يعلی في المسند، 10/ 395، الرقم/ 5998، والقضاعي في مسند الشهاب، 2/ 157، الرقم/ 1091.

ایک روایت میں حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ حضورنبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا: اللہ تعالیٰ غیرت فرماتا ہے؛ اور اللہ تعالیٰ اس پر غیرت فرماتا ہے کہ کوئی مومن اُس فعل کا مرتکب ہو جسے اللہ تعالیٰ نے حرام قرار دیا۔

یہ حدیث متفق علیہ ہے۔

Copyrights © 2020 Minhaj-ul-Quran International. All rights reserved