سیدنا صدیق اَکبر (رض) کے فضائل و مناقب

تفصیلی فہرست

کتاب القول الوثیق فی مناقب الصدیق رضی اللہ عنہ

1. باب فی أوّل من أسلم من الرجال

(بالغ مردوں میں سب سے پہلے اسلام قبول کرنے والے )

2. باب فی بيان إسمه ونسبه

(صدّیقِ اکبر رضی اللہ عنہ کا نام و نسب)

3. باب في من سرّه أن ينظرعتيقا من النار فلينظرإلي أبي بکر رضي الله عنه

(جسے آگ سے محفوظ شخص دیکھنا ہو وہ ابوبکر رضی اللہ عنہ کو دیکھ لے)

4. أنزل الله سبحانه وتعالیٰ له إسم صديق من السمآء

(آپ رضی اللہ عنہ کا لقب صدّیق آسمان سے نازل فرمایاگیا)

5. قال أبو بکر رضي الله عنه : أصدقه صلي الله عليه وآله وسلم فيما أبعد من ذٰلک

(میں تو معراج سے بھی عجیب تر خبروں میں حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی تصدیق کرتا ہوں)

6. قال الصحابة رضی الله عنهم إنه أفضل الناس من الأمّة

(قول صحابہ رضی اللہ عنھم : آپ رضی اللہ عنہ امت میں سب سے افضل ہیں)

7. لو کان للنبي صلي الله عليه وآله وسلم خليلا لکان ابو بکر رضي الله عنه

( اگرکوئی خلیل مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ہوتا تو ابو بکر رضی اللہ عنہ ہوتے )

8. إن النبي صلي الله عليه وآله وسلم إتخذه رضي الله عنه صاحبا

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ صاحب مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم )

9. إن النبي صلي الله عليه وآله وسلم اتخذه رضي الله عنه رفيقا

(صدیقِ اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ رفیقِ مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم )

10. إن النبي صلي الله عليه وآله وسلم اتخذه رضي الله عنه نائبا

(صدیقِ اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ نائبِ مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم )

11. إن النبي صلي الله عليه وآله وسلم اتخذه رضي الله عنه وزيراً

(صدیقِ اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ وزیرِ مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم )

12. إن النبي صلي الله عليه وآله وسلم اتخذه رضي الله عنه سمعا و بصرا

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ سمع و بصرِ مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم )

13. أحب خلق اﷲ إلي الرسول صلي الله عليه وآله وسلم

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ حبیب مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم )

14. أعلم الناس مزاج رسول اﷲ صلي الله عليه وآله وسلم

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ شناسائے مزاجِ مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم )

15. اشد توقيرا و تعزيرا لرسول اﷲ صلي الله عليه وآله وسلم

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ فنائے ادبِ مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم )

16. اشد حبّا للنبي المصطفيٰ صلي الله عليه وآله وسلم

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ کشتۂ عشقِ مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم )

17. اعتزازه رضي الله عنه بکونه ثاني اثنين

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ ثانی اثنین)

18. إن رسول اﷲ صلي الله عليه وآله وسلم يغضب لغضب الصديق رضي الله عنه

(ابوبکر رضی اللہ عنہ ناراض تو مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ناراض)

19. کان النبي صلي الله عليه وآله وسلم ينظر إلي الصديق رضي الله عنه و يتبسم إليه

(حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم آپ رضی اللہ عنہ کو پیار سے دیکھتے اور تبسم فرماتے)

20. تصدق الصديق بکل ماعنده لرسول اﷲ صلي الله عليه وآله وسلم

( صدّیق اکبر رضی اللہ عنہ نے حضورِ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر اپنا سب کچھ لٹا دیا)

21. قول الصديق رضي الله عنه : أبقيت لهم الله و رسوله

(میرے لیے اللہ اور اس کا رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ہی کافی ہے)

22. قال النبي صلي الله عليه وآله وسلم : ما نفعني مال أحد قط ما نفعني مال أبي بکر

( کسی کے مال نے کبھی مجھے اتنا نفع نہیں دیا جتنا ابوبکر رضی اللہ عنہ کے مال نے دیا ہے)

23. قال رسول اﷲِ صلي الله عليه وآله وسلم : إنّه ليس أحد أمنّ علي فِي نفسه وماله من أبِي بکرابن أبي قحافة رضي اﷲ عنهما

(ابو بکر رضی اللہ عنہ سے بڑھ کر مجھ پر کسی نے احسان نہیں کیا)

24. قال رسول اﷲ صلي الله عليه وآله وسلم : ما لأحد عندنا يد إلّا وقد کافيناه ما خلا أبابکر

(ہمارے اوپرکسی کا کوئی ایسا احسان نہیں جس کا ہم نے بدلہ نہ چکا دیا ہو، سوائے ابوبکر رضی اللہ عنہ کے)

25. قرأش عليه رضي الله عنه السلام فقال : أراض أنت عني

(اللہ تعالیٰ نے صدیق اکبر رضی اللہ عنہ پر سلام بھیجا اور پوچھا : کیا تم مجھ سے راضی ہو؟)

26. لم تبقي خوخة في المسجد النبوي غيرخوخة أبي بکر

(مسجد نبوی کے صحن میں صدیق اکبر رضی اللہ عنہ کا دروازہ کھلا رکھا گیا)

27. أحسن الناس أخلاقا

( صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ حسن خلق کا پیکر اتم)

28. کونه جامع الحسنات کلها

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ جملہ حسنات کے جامع)

29. کان يدعونه الصحابة : يا خليفة رسول اﷲ!

(صحابہ کرام آپ رضی اللہ عنہ کو خلیفۃ الرسول کہہ کر پکارتے)

30. اوّل من جمع القرآن

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ پہلے جامع القرآن)

31. إنه يبعث يوم القيامة والنبي صلي الله عليه وآله وسلم اٰخذ بيده

(روزِ قیامت اٹھتے وقت صدیق اکبر رضی اللہ عنہ کا ہاتھ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ہاتھ میں ہو گا)

32. بشره النبي صلي الله عليه وآله وسلم بالجنة في الدنيا

(حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے آپ رضی اللہ عنہ کو دنیا میں ہی جنت کی بشارت عطا فرما دی)

33. إنه أوّل من يدخل الجنّة من الأمّة المحمّدية علي صاحبها الصلٰو ة والسلام

(امت محمدی علی صاحبہاالصلٰوۃ والسلام میں سب سے پہلے جنت میں جانے والے)

34. إن الصّديق سيدکهول أهل الجنة

(آپ رضی اللہ عنہ عمر رسیدہ جنتیوں کے سردار ہیں)

35. إن الصديق يري في الجنة کالنّجم الطّالع في أفق السّماءِ

(آپ رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ آسمانِ جنت کا درخشاں ستارا ہیں)

36. يتجلي اﷲ لأبي بکر في الآخرة خاصة

(آخرت میں اﷲ تعالیٰ آپ رضی اللہ عنہ کو اپنا دیدار خاص عطا فرمائے گا)

37. صبره و تثبته عند وفاة النبي صلي الله عليه وآله وسلم

(وصالِ محبوب صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر صبر و استقامت)

38. صاحب النبي صلي الله عليه وآله وسلم في الغار والمزار

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے غار و مزار کے ساتھی ہیں)

39. حبه واقتداء ه و شکره واجب علي الأمة

(صدیق اکبر رضی اللہ عنہ کی محبت و اطاعت اور شکر اُمت پر واجب ہے)

40. حبه و مودته لأهل بيت النبي صلي الله عليه وآله وسلم

آپ رضی اللہ عنہ کی محبت و مودتِ اہل بیت رضی اﷲ عنہم

41. ماروي عن علي المرتضيٰ رضي الله عنه في مناقب أبي بکر رضي الله عنه

فضائلِ ابی بکر رضی اللہ عنہ ۔ ۔ ۔ بروایاتِ علی المرتضیٰ رضی اﷲ عنہ

ماخذ و مراجع

Copyrights © 2019 Minhaj-ul-Quran International. All rights reserved